Butterflies as an animate object

07 Oct 2021 Ref-No#: 3687

Assalamualikum muftisaheb

  1. l have a few items (bedding, etc) which contains depictions of butterflies on them.
    Please could muftisaheb advise, specifically regarding the image of a butterfly, is it considered as an animate object which would need to be covered when one performs salah, or goes to bed at night, etc?

2) If it does need to be covered, then which part of the butterfly should be covered?

Jazak-Allah muftisaheb

Answer

Wa’alaykum as Salam wa rahmatullahi wa barakatuhu,

An image will be considered as animate if the facial features are apparent.

If the facial features are not apparent, it will not be considered as a picture of animate objects. In that case, it will be permissible.

It is only the facial features which need to be covered.

If you are unsure, you may send a picture via whatsapp to +27 (0) 81 414 2080. Insha Allah, we will then advise accordingly.

References

وإن كان التمثال مقطوع الرأس أو ممحو الوجه فهو ليس بتمثال . (شرح السير الكبير – 4 / 160)

وتفيسر قطع الرأس في هذا الباب أن يمحي رأس الصورة بخيط يخاط عليها، بحيث لا يبقي للأصل أثراً أصلاً، أو يطلي على رأسه شيئاً بحيث لا يبقي للرأس أثراً أصلاً (المحيط البرهاني – 5  /309)

حضرت عائشہ رضی اللہ تعالی عنہا  کی گڑیا  کیسی تہی؟ کپرے کی یا لوہے کی، تامبے پیتل کی اور پہر ان می ہاتہ، پاوں ، آنکہ، ناک وغیرہ اعضاء بہی مجود تہے یا نہی؟ جب تک مستدل ان چیزوں کی تحقیق نہ کرے اس وقت تک زمانہ مروجہ کی گریاں بنانے اور فروخت کرنے پر استدلال درست نہ ہوگا- تصویر جاندار کی بنانے اور رکہنےسے خواہ کپڑے کی ہو، خواہ کسی شئ کی احادیث می صریح ممانعت ہے-(فتاوی محمودیۃ – 19  / 501)

گڑیوں کی اگر شکل وصورت ، آنکہ، کان ، ناک وغیرہ بنی ہوئی ہو تو وہ مورتی اور بت کے حکم میں ہیں، ان کا رکہنا اور بچیوں کا ان سے کہیلنا جائز نہیں، اور اگر مورتی واضح نہ ہو تو بچیوں کو ان سے کہلنے کی اجازت ہے (آپ کے مسائل اور ان کا حل – 8 / 462(

جن گڑیوں کے نقوش نمایاں نھیں ھوتے یعنی کان ناک دیگر اعضاء واضح نھیں ہو تے، محض ایک ہیولاسا ہو تا ہے، ان کے ساتہ بچوں کا کھیلنا جائز ہے اور ان گریوں کو گھر میں رکھنا جائز ہے-  لیکین پلاسٹک کے جو کھلونے بازار میں ملتے ہیں وہ تو پوری مورتیاں ہیں- ان مجسموں کی خرید و فروخت اور ان کا گھر میں رکھنا جائز نہیں-(دیجیٹیل تصویر او سیڈی کے شرعی احکام –  ص: 73)